بنوں میں پہلی بار گاڑیوں کے مستریوں کیلئے ورکشاپ کا انعقاد

پاکستان میں پہلی بار بنوں کے گاڑیوں کے سینکڑوں مستریوں کے لئے ٹریننگ اور آگاہی ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا ۔مستریوں کو انجن کے حوالے سے تازہ ترین اور اہم معلومات فراہم کی گئی ۔ ماحولیاتی آلودگی پر قابو پانے کے لئے مختلف تراکیب بھی دے دےئے گئے۔ تفصیلات کے مطابق جنرل پٹرولیم کی جانب سے پاکستان میں پہلی بار مستریوں کی استعداد کار اورآ گاہی کے لئے ایک روزہ ورکشاپ کا مقامی ہوٹل میں انعقاد کیا گیا جس میں مستریوں کو جدید تقاضوں کے ساتھ چلنے اور مشنریوں میں آنے والی تبدیلیوں اور ان کو محفوظ رکھنے کے لئے معلومات فراہم کی گئی ۔ اس موقع پر جنرل پٹرولیم کے ٹیکنکل ماہر محمد شہزاد اور محمد عارف نے بتایا کہ تیل قدرت کا انسان کے لئے بہترین تحفہ ہے اور ہمارے زندگی کے تقریباً تمام شعبوں کا دار و مدار اج کل تیل پر ہے خصوصاً ہماری مشنری اور گاڑیاں ان کے بغیر بے کار ہیں۔انہوں نے گاڑیوں میں تیل کے صحیح طریقہ استعمال کے بارے میں تفصیل سے لیکچر دیتے ہوئے مزیدکہا کہ صحیح تیل کے استعمال سے انجن کی عمر زیادہ کی جا سکتی ہیں اور ان میں مرمت کے کام کو بھی کم کیا جا سکتا ہے۔ اس لئے گاڑیوں کی عمر کو زیادہ کرنے کیلئے صحیح انتخاب بہت ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں آلودگی ایک بہت بڑا مسئلہ بنتا جا رہا ہے اور اس کو کم کرنے میں ہم اپنی طرف سے یہ کوشش کر سکتے ہیں کہ ایسے تیل کا استعمال کریں جو ماحولیاتی الودگی میں اضافہ کا سبب نہ بنے ۔اس موقع پر انہوں نے مستریوں کی طرف سے مختلف نوعیت کے سوالات کی جوابات بھی دےئے اور ان کو مطمئن کیا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں