بنوں: گردوں کے مریض کی فریاد،علاج کا خرچہ ایک کروڑ

گردوں کے مرض میں مبتلا ڈومیل غنی خیل کے رہائشی کے علاج پر ایک کروڑ روپے خرچہ آئے گا، لواحقین نے حکومتی سطح پر علاج معالجے کا مطالبہ کر دیا۔ زاہد اللہ خان نے اپنی فریاد میڈیا کو سناتے ہوئے بتایا کہ ان کے والد ریٹائر آرمی حوالدار تھے اور فوت ہو چکے ہیں جبکہ میرا بھائی رحیم اللہ گردوں کی بیماری میں مبتلا ہے جس کا علاج اسلام آباد میں ممکن ہے مگر وہاں کے ڈاکٹروں نے ان کی آپریشن کیلئے ایک کروڑ روپے خرچہ بتایا ہے جوکہ ہماری استعداد سے بالکل باہر ہے۔ ہمارے پاس جتنی جمع پونجی تھی سب خرچ کی مگر میرا بھائی ٹھیک نہیں ہو رہا۔ اب ہمارے پاس ایک ہی راستہ باقی ہے کہ ان کا علاج حکومتی اخراجات پر ہو ۔ ہمارے والد آرمی میں تھے لہذا حکومت ہماری فریاد سن کر ہمارے بھائی جوکہ زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہے کا علاج معالجہ کرائے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں