ملک طفیل کے قاتل سیاسی دباؤ کی وجہ سے تاحال گرفتار نہیں ہوئے: جماعت اسلامی

جماعت اسلامی ضلع بنوں اور اقوام شمشی خیل نے جماعت اسلامی کے مقتول رہنما ملک طفیل خان کے قاتلوں کی گرفتاری کیلئے سات دن کی ڈیڈ لائن دے دی۔ جماعت اسلامی اور اقوام شمشی خیل کا مشترکہ جرگہ جماعت اسلامی کے ضلعی دفتر میں منعقد ہوا جس سے خطاب کرتے ہوئے جماعت اسلامی کے ضلعی امیر ڈاکٹر ناصر خان،نائب امیر مفتی صفت اللہ،اے این پی کے طاہر خان،حاجی فیروز خان،مرحوم کے بھائی ملک روفیل خان مغل خیل ودیگر مشران نے کہا کہ ہم جماعت اسلامی کے رہنما ملک طفیل خان کے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔ یہ کھیل دہشت گردی ہے اور ہم سب ملک طفیل کے غم میں برابر کے شریک ہیں ۔انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ جماعت اسلامی کے رہنما ملک طفیل خان کو قتل کیا گیا ہے اور ہم اس سلسلے میں پولیس کی کارکردگی سے مطمئن نہیں ۔پولیس فوری قاتلوں کی نشاندہی کرے حکومت اور ضلعی پولیس نے تاحال مقتول کے قاتلوں کو گرفتار نہیں کیا ہے اور سیاسی دباؤ کی وجہ سے تاحال ملزمان گرفتار نہیں کئے جارہے ہیں جو کہ پولیس کو سیاسی مداخلت سے پاک کرنے کے عمران خان کے دعوؤں کی نفی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ امیر جماعت اسلامی سراج الحق کی مداخلت پر آئی جی پی نے ڈی آئی جی بنوں کو قاتلوں کی گرفتاری کیلئے دس دن کی مہلت دی تھی لیکن بیس دن ہوگئے کہ ملزمان تاحال گرفتار نہیں ہوئے ۔اس موقع پر انہوں نے ملزمان کی گرفتاری کیلئے سات دن کی ڈیڈ لائن دیتے ہوئے دھمکی دی کہ اگرسات دنوں میں قاتلوں کو گرفتار نہیں کیا گیا تو آئندہ کے احتجاج کیلئے لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں