بنوں:میونسپل کمیٹی کی دکانیں تجاوزات قرار،مسماری کے بعد بھی کرایہ وصول

مرغی منڈی کے تاجروں نے الاٹ شدہ 47 دکانات کی مسماری کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا ہے ۔ہم سے روز گار چھینا گیا متبادل دکانات دینے تک ہڑتال جاری رکھیں گے۔ گزشتہ بنوں مرغی منڈی کے تاجروں لعل شہباز ، مصطفیٰ ، وہاب ، صادق خان اور جاوید خان نے احتجاجی مظاہرے کے بعد ازاں پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ مرغی منڈی میں تحصیل میونسپل کمیٹی نے مرغی فروشوں کو دکانیں الاٹ کی تھی جس میں وہ 20سے 25سال سے کاروبار کر رہے ہیں، اب بنوں کیلئے منظور شدہ بیوٹیفکیشن منصوبے کے تحت تجاوزات ہٹائی جا رہی ہے جس کی ہم نے حمایت کی ہے لیکشن گزشتہ شب ضلعی انتظامیہ کے اہلکاروں نے درجنوں دکانات مسمار کئے جوکہ ظلم اور زیادتی ہے ۔
اُنہوں نے کہا کہ ہم تجاوزات کے خلاف آپریشن کی حمایت کرتے ہیں لیکن مذکورہ دکانیں میونسپل کمیٹی انتظامیہ نے ہمیں الاٹ کی تھی کوئی تجاوزات نہیں بنائی۔ اگر ہمارے دکانات تجاوزات کی زد میں آتے تو انتظامیہ پہلے ہمیں نوٹس جاری کر تی مگر کوئی نوٹس نہیں دیئے گئے ۔اُنہوں نے تحصیل بنوں کو تنقید کا نشانہ بنایا کہ جب ہم نے آپریشن کے بعد ان سے رابطہ کی کوشش کی تو وہ موبائل فون بند کرکے پشاور چلے گئے ۔ہم نے دکانات مسماری کے بعد بھی میونسپل کمیٹی کو دکانات کا کرایہ جمع کیا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ ہم نے کوئی تجاوز نہیں کیا۔ اس لئے اپنے حق کے حصول کیلئے عدالت کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے کیونکہ اب روزانہ کی بنیاد پر ہمیں ہزاروں ، لاکھوں روپے کا نقصان اُٹھانا پڑ رہا ہے۔ جب تک ہمیں متبادل دکانیں نہیں دی جاتی تب تک ہڑتال جاری رہی گی۔ اُنہوں نے کہا کہ ہم اپنے بال بچوں سمیت سڑکوں پر نکل کراحتجاجی تحریک بھی شروع کریں گے اس دوران کسی بھی نقصان کی ذمہ داری متعلقہ حکام پر ہو گی۔ اس موقع پر میونسپل کمیٹی کے خلاف شدید نعرے بازی بھی کی گئی ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں