بنوں ٹاون شپ کے 21 ملازم فارغ ،ٹاون میں دن کو پالتو جانوروں ، رات کوآوارہ کتوں کا راج

بنوں ڈویلپمنٹ آتھارٹی کے 21 کام چور سرکاری ملازم ملازمت سے فارغ کر دیئے گئے جبکہ تین ملازمین کو ضلع بدر کیا گیا ۔اسٹنٹ کمشنر بنوں و پراجیکٹ ڈائریکٹر بنوں ڈویلپمنٹ آتھارٹی شبیر خان نے ڈپٹی کمشنر بنوں محمد علی اصغر کی ہدایت پر بنوں ٹاؤن شپ میں ماہانہ صفائی مہم کے حوالے سے ملازمین کی ڈیوٹیاں لگائی تھیں لیکن چیکنگ کے دوران اکثر ملازمین غیر حاضر پائے گئے جس پر ملازمین کو متعدد بار نوٹس جاری ہوئے اور ان کی تنخواہوں سے کٹوتی کی گئی لیکن ملازمین اس کے باوجود ڈیوٹیوں سے غائب رہے جس پر اسٹنٹ کمشنر بنوں نے بی ڈی اے کے 21 ملازمین برخاست کر دیئے اور تین ملازموں کو بنوں سے ضلع بدر کیا۔
ٹاؤن شپ کے مکینوں نے کام چور ملازمین کی برخاستگی کے اقدام کو سراہا اور اُمید ظاہر کی کہ اس سے دوسرے ملازمین بھی سبق حاصل کریں گے۔ اہلیان ٹاؤن شپ کا کہنا ہے کہ ہم نے بدیں وجہ دیہاتوں میں اپنی تمام جائیدادیں فروخت کرکے ٹاؤن شپ میں رہائش اختیار کر لی تاکہ یہاں پر مسائل و مشکلات کا سامنا نہ ہوں لیکن بنوں ٹاؤن شپ تو مسائلستان بن گیا ہے۔ اہل علاقہ متعدد مسائل سے دوچار ہیں۔24 گھنٹوں میں بمشکل چار سے پانچ گھنٹے بجلی میسر ہوتی ہے۔ سیوریج کا نظام خراب ہر طرف گندگی کے ڈھیر پڑے ہیں۔اسے ٹھکانے لگانے والا کوئی نہیں۔ٹاون شپ میں تعمیراتی کام زور و شور سے جاری ہے لیکن نہ تو بی ڈی اے ملازمین نے صفائی ستھرائی کی طرف کوئی توجہ دی ہے اور نہ ہی علاقے کے مکینوں نے، اسی وجہ پر بنوں ٹاؤن شپ مسائل کا گڑھ بن گیا ہے ۔گھروں کا کوڑا کرکٹ جہاں جی میں آیا پھینک دیا جاتا ہے ۔بنوں ٹاؤن شپ میں دن کو پالتو جانوروں بھیڑ بکریوں اور گائے کا راج ۔رات کو پورے ٹاؤن شپ میں آوارہ کتوں کا راج ہوتا ہے۔ ٹاؤن شپ کی باؤنڈری وال نہ ہونے کی وجہ تمام پودے اور قیمتی درخت اور گھاس کو مویشی چاٹ جاتے ہیں ۔اسی طرح لوڈ شیڈنگ نے ہمارا جینا محال کر دیا ہے۔ واپڈا والے بجلی کے بل دیتے ہیں پر بجلی دیتے نہیں ۔اسسٹنٹ کمشنر شبیر خان نے بتایا کہ ہم نے بار بار نکالے گئے ملازمین کو سدھرنے کا موقع دیا۔ ان کو متعدد بار تنبیہی نوٹس دیئے ان کی تنخواہوں سے کٹوتی کی لیکن وہ نہ سدھرے بدیں وجہ ان کو برخاست کیا۔انشاء اللہ آئندہ چند ماہ میں ٹاون شپ کے مکین خوش خبری سنیں گے۔ ٹاون شپ کے باؤنڈری وال کے لئے کروڑوں روپے کا فنڈ منظور ہوچکا ہے اور چند مہینوں کے اندر باقاعدہ اس پر کام شروع ہوجائے گا۔ کوڑا کرکٹ کو ٹھکانے لگانے کے لئے مشینری اور گھروں کے سامنے ڈسٹ بن رکھنے کا بندوبست کیا جائیگا ۔علاقے کے مکینوں سے اپیل کی کہ وہ بھی اپنا مثبت کردار ادا کریں اور گھر کے کوڑا کرکٹ کو کسی شاپر میں ڈال کر گھروں کے سامنے رکھیں۔ بی ڈی اے کے ملازمین آکر اسے روزانہ کے حساب سے اسے گھروں کے سامنے سے اُٹھا کر ٹھکانے لگا دیں گے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں