قوم کی افراتفری سے ہم پر غیر مسلط ہو جاتے ہیں:ڈاکٹر پیر صاحب زمان

میریان قبیلے کا آئندہ انتخابات کیلئے مشترکہ صوبائی اسمبلی پی کے 89 پر اُمیدوار لانے کیلئے گرینڈ جرگہ ہوا ، میریان قبیلے کے بیشتر شاخوں نے ڈاکٹر پیر صاحب زمان کے سر پر پگڑی باندھ دی جبکہ قبیلے کے انتخاب لڑنے کے خواہشمنددو ڈسٹرکٹ کونسلرز اپنے حامیوں کے ہمراہ اُٹھ کر چلے گئے گزشتہ روز ممہ خیل کے مقام پر میریان قبیلے کے نوجوانوں سلیم آزاد ، نیک داد خان اور دیگر نے اتفاق و اتحاد پیدا کرنے کیلئے آئندہ انتخابات میں صوبائی اسمبلی کی نشست پی کے 89 پر متفقہ اُمیدوار لانے کیلئے دوسرا گرینڈ جرگہ کا انعقاد ہوا اس موقع پر جرگہ کو بتایا گیا کہ میریان قبیلے کے تین اہم شخصیات ڈاکٹر پیر صاحب زمان ، ڈسٹرکٹ کونسلر ملک دل نواز خان ، ڈسٹرکٹ کونسلر وقار خان کے نام خواہشمند کے طور پر سامنے آئے ہیں لیکن ہمیں پتہ چلا ہے کہ اس تعداد میں اضافہ ہوا ہے تاہم مثبت تجاویز دیکر قوم کے اندر اتفاق پیدا کیا جائے
لیکن جرگہ بد انتظامی کا شکار ہوا اور ڈسٹرکٹ کونسلرز ملک دل نواز خان ، وقار خان اپنے حامیوں کے ہمراہ احتجاجاً جرگے سے اُٹھ کر چلے گئے تاہم اس موقع پر موجود میریان قبیلے کے ممہ خیل ، نورڑ ، درے دڑیز ، ہوید کے سینکڑوں مشران کے ہمراہ پی ٹی آئی کے ڈسٹرکٹ کونسلر مطاہر خان نے مشاورت کے بعد مسلم لیگ ن کے صوبائی نائب صدر ڈاکٹر پیر صاحب زمان کی آئندہ انتخابات میں پارٹی وابستگیوں سے بالا تر ہوکر مکمل حمایت کا اعلان کرتے ہوئے بھرپور تعاون کی یقین دہانی کرائی اس موقع پر ڈاکٹر پیر صاحب زمان نے جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایسے لوگوں کی وجہ سے میریان قبیلے کے عوام گزشتہ 70 سالوں سے محروم چلی آرہی ہے یہ لوگ قوم کے اندر افراتفری پھیلا کر غیروں کو مسلط کرنا چاہتے ہیں انشاء اللہ قوم نے ان لوگوں کو پہچان لیا ہے میریان قبیلہ 2018 ء انتخابات میں ایسے لوگوں کو نشان عبرت بنائیں گے

اپنا تبصرہ بھیجیں