فارماسسٹس کو حکومت خود نوکری دے ،ہمارے سر نہ تھوپیں: کمیسٹ اینڈ ڈرگسٹ ایسوسی ایشن

ڈرگ رولز2017 کے خلاف صوبے کے دیگر اضلاع کی طرح بنوں کی کمیسٹ اینڈ ڈرگسٹ ایسوسی ایشن نے مکمل شٹر ڈاؤن ہڑتال کرتے ہوئے دکانیں بند رکھی۔ صوبائی حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی کی اور مطالبات کی منظوری تک ہڑتال جاری رکھنے کا اعلان کیا۔ عوام کو ادویات ہڑتال سے پہلے پہلے لینے کی بھی ہدایت کی گئی تھی ۔صوبائی حکومت کی جانب سے ڈرگ رولز کے خلاف بنوں کے کمیسٹ اور ڈرگ ایسوسی ایشن نے منگل کے روز مکمل شٹرڈاؤن ہڑتال کرتے ہوئے لکی گیٹ میں بڑا احتجاجی جلسہ بعد ازاں پریس کلب تک احتجاجی ریلی نکالی ۔جس سے خطاب کرتے ہوئے صدر حافظ الطاف رحمن ، سینئر نائب صدر زاہد خان ، نائب صدر پیر جنید خان ، جنرل سیکرٹری مظہر خان ، جوائنٹ سیکرٹری نعمت اللہ خان ، چیئرمین احدان اللہ خان ، نائب چیئرمین حاجی عجب گل ، پریس سیکرٹری ساجد علی شاہ ، فنانس سیکرٹری عمر دراز خان ، صوبائی وائس چیئرمین محمد عالم خان و دیگر نے کہا کہ ڈرگ رولز 2017کا خاتمہ کرکے فیصلہ واپس لیا جائے کیونکہ ترمیم کے خاتمے تک کسی کو ایک ٹیبلیٹ دوائی تک نہیں ملے گی۔ یہ ہمارا معاشی قتل ہے اور اس کے لئے ہم ہر گز تیار نہیں اور اس رولز کی وجہ سے لاکھوں خاندان متاثر ہو رہے ہیں۔
صوبائی بیوروکریسی دانستہ طور پر مشکلات پیداکر رہی ہیں اور ایڈیشنل سیکرٹری ابراہیم اس میں پیش پیش ہیں۔ وہ فارماسیسٹ کالجوں کے مالک ہیں اور یہ سب کچھ اسی کے لئے کر رہے ہیں ۔حکومت کو چاہیئے کہ فارما سیسٹ کو سرکاری ملازمت پر لگائیں جو فارماسیسٹ سرکاری ہسپتالوں میں نہیں لگا سکتے وہ ہم دکانوں میں کیسے رکھیں ۔حکومت بیوروکریسی کے ہاتھوں میں کھلونا نہ بنیں کیونکہ ہمارے احتجاج سے پورے صوبے کے کروڑوں عوام متاثر ہو رہے ہیں۔ مقررین نے یہ اعلان کیا کہ ہم شٹرڈاؤن ہڑتال کو وسعت دیں گے اور کوہاٹ روڈ کو بند کریں گے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں